انسان اور جانوروں کی زندگی کا دورانیہ مختلف کیوں ہوتا ہے؟

سائنس دانوں کو یہ مسئلہ عرصے سے درپیش رہا ہے کہ آخر ایسا کیوں ہے کہ مختلف جانوروں کی زندگیوں کا دورانیہ مختلف ہوتا ہے۔

جہاں انسان ایک اندازے کے مطابق 70 سے 80 سال تک زندہ رہتا ہے، وہیں ایک زرافہ 24 سال اور ایک چوہا 25 سال تک زندہ رہ سکتا ہے۔ جس سے معلوم ہوتا ہے کہ یہ معاملہ جسم کے سائز سے ہٹ کر ہے۔اس معمے کو حل کرنے کے لیے ویلکم سینگر انسٹیٹیوٹ کے محققین نے انسان، چوہے، شیر، زرافے اور ٹائیگر سمیت 16 اقسام کے جانداروں کے جینوم کا موازنہ کیا۔تحقیق کے نتائج میں معلوم ہوا کہ جن جانوروں میں جینیاتی تبدیلیاں سستی سے ہوتی ہیں –جس کو سومیٹک میوٹیشن کہا جاتا ہے- ان کی زندگی کا دورانیہ طویل ہوتا ہے۔سومیٹک میوٹیشن قدرتی طور پر تمام خلیوں میں کسی جانور کی پوری زندگی ہوتی ہیں، جبکہ ہر سال اوسطاً انسان میں 20 سے 50 میوٹیشنز ہوتی ہیں۔زیادہ تر سومیٹک میوٹیشن غیر نقصان شدہ ہوتی ہیں، کچھ میوٹیشنز خلیوں کے فنکشن کو نقصان پہنچاتے سکتے ہیں یا کسی خلیے کو کینسر تک بھی لے جا سکتے ہیں۔ان میوٹیشنز کا عمر بڑھنے میں کردار کے متعلق 1950 کی دہائی سے بتایا جارہا ہے لیکن اب تک ان کے عمل میں ہونے کا مشاہدہ پیچیدہ تھا۔ Adsence Ads 300X250

Source

Leave a Reply

Your email address will not be published.

13 − six =

Back to top button