بچے کی پیدائش کے بعد ماں صحت مند کیسے رہے؟ دیکھئیے ایسے طریقے جس پر عمل کرکے آُپ بھی فٹ رہ سکتی ہیں

ہمارے یہاں لڑکیاں شادی سے پہلے فٹ رہنے کیلیئے جتنا اپنی صحت کا خیال رکھتی ہیں اتنا وہ شادی اور بچہ ہونے کے بعد نہیں رکھتیں، یہی وجہ ہے کہ بہت سی خواتین کا جسم شادی کے بعد پھول جاتا ہے اور ان پر موٹاپہ چڑھ جاتا ہے جو کہ آگے چل کر بیماریاں پیدا کرسکتا ہے اسلیئے، ایک نئی ماں بننے والی عورت کو بچہ پیدا کرنے کے بعد صحت مند رہنے کی کوشش کرنی چاہیے خاص کر جنھیں آپریشن سے بچہ ہوتا ہے۔ ہر عورت اپنے دوران حمل جسمانی اور جذباتی سطح پر انقلابی تبدیلیوں سے گزرتی ہے ایسے میں بچہ پیدا کرنے کی سختیاں اسے کمزور کردیتی ہیں۔ ڈاکٹر امِ راحیل نے بھی اس سے متعلق بتایا ہے کہ کس طرح خواتین بچہ ہونے کے بعد اپنی صحت کا خیال رکھ سکتی ہیں۔ آج ہم آپکو بتاتے ہیں کہ ایسی خواتین کو صحت مند رہنے کیلیئے کیا کرنا چاہیئے۔

غذائیت سے بھرپور خوراک:

ایک نئی ماں کو متوازن غذا لینی چاہیئے کیونکہ ایک نوزائیدہ کو ایک دن میں کئی بار دودھ پلانے کی ضرورت ہوتی ہے۔ بہت سی نئی مائیں فوری طور پر وزن کم کرنا چاہتی ہیں جو کہ صحت مندانہ عمل نہیں ہے۔ آرام کرنے اور ورزش کرنے کے ساتھ آپ کی خوراک بھی آپ کو توانائی فراہم کرنے میں بڑا کردار ادا کرتی ہے۔ اس بات کو یقینی بنانے کے لیے کہ آپ جو کچھ کھاتے ہیں وہ دن بھر آپ کو طاقت دیتا ہے اسکے لیئے ڈاکٹروں کی طرف سے خصوصی فوڈ سپلیمنٹس کے ساتھ پروٹین اور غذائیت سے بھرپور خوراک لیں۔ جس میں پھل، سبزیاں، اناج، پتوں والی سبزیاں، آئرن، پروٹین اور وٹامن سی والی غذائیں شامل ہیں۔ اگر آپ ملازمت کرتی ہیں تو اپنے سیال کی مقدار کو بڑھانا یقینی بنائیں جس کے لیئے پانی، دودھ اور پھلوں کے جوس سب سے بہترین انتخاب ہیں۔

سی سیکشن کے بعد:

سی سیکشن کے بعد صحت مند رہنا ان لوگوں سے تھوڑا سا مختلف ہو سکتا ہے جن کی نارمل ڈیلیوری ہو۔ ایسی خواتین کو چاہیئے کہ وہ اٹھیں چلیں پھریں اور جسم کو حرکت میں رکھیں تاکہ قبض اور خون کے جمنے کے عمل کو روکا جاسکے۔ سی سیکشن کے دوران ضائع ہونے والا خون اور جسم کے پانی کو دوبارہ ٹھیک کرنے کیلیئے پانی اور خون بنانے والے جوس اور غذا کا استعمال کریں۔ اور جب آپ دودھ پلا رہی ہوں تو اپنے پیٹ کو تکیوں سے سہارا دیں۔

احتیاط سے دودھ پلائیں:

ماں کا دودھ بچے کیلیئے بنیادی ذریعہ ہے ایک ماں جب بچے کو پالتی ہے تو اس کے ساتھ اسکا خاص تعلق پیدا ہوجاتا ہے اور بچہ بھی خوراک اور محبت کے لیے اسی پر انحصار کرتا ہے۔ چونکہ بچوں میں آدھی رات کو جاگنے کی مہارت ہوتی ہے اسلیئے کوشش کریں کہ ایک مقررہ شیڈول بنالیں اور اس کے مطابق بچے کو دودھ پلائیں اس سے آپ دودھ کی پیداوار کو متحرک کر سکتی ہے۔ دودھ ہمیشہ باری باری دونوں طرف سے پلائیں، صرف ایک طرف سے پلانے سے آپ کا جسم خراب دکھ سکتا ہے۔ رات کو ڈھیلے اور آرام دہ کپڑے پہن کر سوئیں اس سے دردناک چھاتیوں کو سکون ملے گا۔

اپنے پانی کی مقدار کو چیک کریں:

ہم سب جانتے ہیں کہ ہمارا جسم 70 فیصد پانی سے بنا ہے اور اسے ہر وقت ہائیڈریٹ رکھنا کتنا ضروری ہے۔ اوریہ اُس وقت زیادہ اہم ہو جاتا ہے جب آپ ماں بنتی ہیں کیونکہ یہ صرف پانی ہے جو خلیوں اور اعضاء کو ٹھیک کرنے اور جلد از جلد صحتیاب ہونے میں مدد کرتا ہے۔ اس لیے بچہ کے بعد جلد صحت مند ہونے کے لیے اپنے پانی کی مقدار پر دھیان دیں۔

سخت ورزش نہ کریں:

اگر آپ نئی ماں ہیں تو سخت ورزش اور مصروف شیڈول آپ کی صحت کے لیے مکمل طور پر نقصان دہ ہیں۔ کیونکہ ابھی آپ کا جسم دباؤ کو برداشت کرنے کی پوزیشن میں نہیں ہے۔ اسلیئے ماہرین ایسی حالت میں ہلکی فری ہینڈ مشقیں اور تھوڑا سا گھومنے پھرنے کا مشورہ دیتے ہیں۔ اور اگر آپ کو کچھ اٹھانا ہو یا سیڑھیاں چڑھنی ہوں تو مدد طلب کریں اور ضرورت سے زیادہ کام نہ کریں۔

ایک نئے والدین کے طور پر، اپنے ڈاکٹر اور غذائیت کے ماہر سے مناسب مشاورت کے بعد ہی خوراک کی پیروی کریں۔

Source

Leave a Reply

Your email address will not be published.

twenty + 1 =

Back to top button