جاپانی ارب پتی کا مالدار اشرافیہ پر خلائی سفر کرنے پر زور

بین الاقوامی خلائی اسٹیشن میں 12 دن گزارنے کے لیے مبینہ طور پر آٹھ کروڑ ڈالرز خرچ کرنے والے جاپانی ارب پتی نے اشرافیہ پر زور دیا ہے کہ انہیں بھی خلاء کا چکر لگانا چاہیئے۔

جاپانی ارب پتی یوساکو مائزوا نے بدھ کے روز فلائٹ کے بعد پریس کانفرنس میں کہا ’میں چاہوں گا جتنے مکمن ہوں اتنے لوگ اور جتنے ہو سکیں طاقت ور اور با اثر افراد خلاء کا دورہ کریں‘۔انہوں نے مزید کہا کہ وہ زمین کو مختلف طریقے سے دیکھیں گے اور اس کے ساتھ مختلف انداز میں پیش آئیں گے۔اگرچہ اس پرواز کی حقیقی قیمت کی ابھی تک تصدیق نہیں جا سکی ہے لیکن مائزوا کا کہنا تھا کہ یہ رپورٹس کے انہوں نے اس ٹرپ کے آٹھ کروڑ ڈالرز خرچ کیے ہیں کسی حد تک درست ہیں۔46 سالہ مائزوا نے پریس کانفرنس میں مزید کہا کہ زمین کے گرد گھومتی لیبارٹری میں 12 دن کافی نہیں ہیں کیوں کہ ماحول کے مطابق ڈھلنے میں وقت لگتا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ اس طرح کی پرواز کے لیے 20 دن مناسب ہوں گے۔مائزوا کا اگلا ہدف 2023 میں ایلون مسک کی اسپیس ایکس کے چاند کے گرد گھومنے والے مشن میں آٹھ لوگوں اپنے ہمراہ لے جانے کا ہے۔مائزوا کو ان کے اسسٹنٹ یوزو ہِرانو اور خلاء باز الیگزینڈر میسُرکِن کے ہمران 8 دسمبر کو بین الاقوامی اسپیس اسٹیشن کے لیے لانچ کیا گیا تھا جو 20 دسمبر کو واپس زمین پر لوٹے۔مائزوا نے بتایا کہ ان کے لیے سب سے یادگار لمحہ وہ تھا جب انہوں نے ڈاکنگ سے قبل سویوز اسپیس کرافٹ سے انٹرنیشنل اسپیس اسٹیشن کو دیکھا اور جب وہ ڈاکنگ کے بعد اندر داخل ہوئے۔انہوں نے اس بات کا اعتراف کیا کہ فی الوقت خلائی سیاحت بے تحاشہ امیر لوگوں کے لیے ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ جو لوگ خلائی سفر پر جانا چاہتے ہیں انہیں دیگر چیلنجز کے لیے تیاررہنا ہوگا۔ Square Adsence 300X250

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button