مالکن کا سسر زیادتی کا نشانہ بناتا تھا، کراچی سے لاپتہ ہونے والی لڑکی کا انکشاف

کراچی کے علاقے گلزار ہجری سے لاپتہ ہونے والی لڑکی نے انکشاف کیا ہے کہ مالکن کا سسر زیادتی کا نشانہ بناتا تھا اس لیے وہاں سے فرار ہوگئی تھی۔

کراچی کے مبینہ ٹاون تھانے کی حدود سے 14 سالہ لڑکی کے لاپتہ ہونے کا معاملے میں اہم پیش رفت سامنے آئی ہے۔ 16  دسمبر سے لاپتہ ہونے والی لڑکی سولجر بازار کے علاقے سے مل گئی۔خیال رہے ایک ہفتے قبل 16 سالہ لڑکی کے اغوا کا مقدمہ مبینہ ٹاؤن تھانے میں درج کیا گیا تھا۔پولیس کے مطابق نوجوان لڑکی کو گھر پر ہراساں کیا جارہا تھا، جس کی وجہ سے وہاں سے بھاگ گئی تھی، 16 سالہ زینب کو مزید قانونی چارہ جوٸی کے لیے مبینہ ٹاؤن پولیس کے سپرد کردیا گیا ہے۔پولیس نے کہا کہ فرار ہونے والی لڑکی طاہرہ گلزار ہجری میں ماہم نامی خاتون کے گھر میں کام کرتی تھی اور وہ سولجر بازار میں زلیخا نامی خاتون کے گھر سے ملی ہے جس نے لڑکی کو پناہ دی تھی جب کہ زلیخا کی اطلاع پر ہی لڑکی کو تحویل میں لیا گیا۔دوسری جانب کراچی میں صدر واہ کے علاقہ میں 14 سالہ لڑکی کے اغواء کیس میں اہم پیش رفت ہوئی ہے جس میں مقدمہ میں شامل 5 ملزمان  کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔  گرفتار ملزمان میں فرید، شعیب،سعید، وقاص اور عمران شامل ہیں۔دوران تفتیش ملزمان نے 14 سالہ لڑکی کو اغواء کرنے کے بعد قتل کا انکشاف کیا ۔ واقعہ کا مقدمہ مقتولہ کی والدہ کی مدعیت میں تھانہ صدر واہ میں درج کیا گیا تھا۔ Square Adsence 300X250

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button