میٹاورس میں ہراسانی کے بعد “ذاتی حفاظتی حدود” کے تعین کا فیصلہ

فیس بک کی مرکزی میٹا کمپنی کی جانب سے ورچول ریئلٹی تھری ڈی پلیٹ فارم ہورائزن میں ایک خاتون کے نمائندہ اواٹار کی بے حرمتی کے بعد اب میٹا نے ہر فرد کی حدود کا فیصلہ کیا ہے تاکہ مجازی دنیا میں بالخصوص خواتین اجنبیوں کی ان اقدامات سے محفوظ رہ سکیں۔

سوشل میڈیا ماہرین نے اس واقعے کو خوفناک اور تشویشناک کہا ہے کیونکہ لوگ اب بھی فیس بک کمنٹس میں لڑتےہیں اور مجازی دنیا میں اس طرح کے واقعات بڑھنے کا خدشہ بھی موجود ہے۔ یہی وجہ ہے کہ میٹا نے اس پر بہت سنجیدگی سے غور شروع کردیا ہے۔اب میٹا نے ہورائزن ورلڈ میں عمومی طور پر بلکہ ہورائزن میں موجود مختلف مقامات پر تمام افراد کی ذاتی حدود کے تعین کا اعلان کیا ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ اسے ایکٹو کرتے ہیں لوگ آپ کے قریب نہیں آسکیں گے۔میٹا نے اپنی ایک پریس ریلیز میں کہا ہے کہ ذاتی حدود سے اصل لوگوں کے نمائیندہ اواٹار اپنے اردگرد کچھ فاصلے کی مجازی حد کھینچ سکتے ہیں۔ اس طرح لوگوں کے پاس مناسب جگہ موجود ہوگی اور وہ ناخوشگوار واقعے سے بچ سکیں گے۔ میٹا نے اس کے فوری اطلاق کا فیصلہ کیا ہے۔اس کی وجہ یہ ہے کہ خود فیس بک کے صارفین بہت تیزی سے کم ہورہے ہیں اور میٹا کی خواہش ہے کہ وہ کسی طرح مزید لوگوں کو ہورائزن کی جانب راغب کرسکے۔واضح رہے کہ میٹاورس کی اصلاح فیس بک کی میٹا کمپنی سے پہلے موجود ہے اور اس نے یہ لفظ اچک لیا ہے ورنہ اس کے تھری ڈی ورچول پلیٹ فارم کا نام ہورائزن ہے۔ Square Adsence 300X250

Leave a Reply

Your email address will not be published.

five × 4 =

Back to top button