چین کا کرپٹو کرنسی مائننگ کیخلاف پھر اقدام، بِٹ کوائن کی قدر میں کمی

چین میں کرپٹو مائننگ کے خلاف ایک بار پھر کریک ڈاؤن کے بعد بِٹ کوائن کی قدر میں گراوٹ دیکھی جا رہی ہے۔ چینی حکام کرپٹو مائننگ کو کاربن کے اِخراج کے خلاف مُلکی کاوشوں کو خطرے سے تعبیر دے کر اِسے ’’انتہائی نقصان دہ‘‘ قرار دے رہے ہیں۔

چین کے قومی ترقیاتی و اصلاحاتی کمیشن (این ڈی آر سی) کی ترجمان مینگ وائی نے دارالحکومت بیجنگ میں آج ایک پریس کانفرنس کے دوران بٹ کوائن مائننگ پر کڑی تنقید کی۔ اُن کا کہنا تھا کہ اِس اقدام سے توانائی میں کافی کمی ہوتی ہے جبکہ یہ کاربن کے اِخراج میں اضافے کا سبب بھی ہے۔مینگ وائی کا کہنا تھا کہ کرپٹو کرنسی کی پروڈکشن اور تجارت سے انڈسٹری کو شدید خطرات لاحق ہیں۔ این ڈی آر سی کمرشل مائننگ اور حکومت کے ملکیتی انڈسٹری بزنس کو مدّنظر رکھ کر کرپٹو مائننگ کے خلاف ’’بڑا‘‘ کریک ڈاؤن کرے گی۔این ڈی آر سی اپنی نئی کارروائی میں کرپٹو مائننگ میں ملوث سبسیڈائزڈ پاور تک رسائی رکھنے والے کسی بھی ادارے کیلیے بجلی کی قیمتوں میں اضافہ کردے گی۔اِس بیان کے بعد بٹ کوائن کی قیمت میں 7 فیصد سے زیادہ کمی نظر آئی اور یہ ایک ہفتے سے زائد عرصے میں 60،889 ڈالر کی کم ترین سطح پر آگئی۔ بٹ کوائن کے بعد دوسری بڑی ڈیجیٹل کرنسی ایتھر 8 فیصد کمی کے بعد دو ہفتوں کی بد ترین کمی سے  4،297 ڈالر کی سطح پر دیکھی جا رہی ہے۔رواں سال چین میں کرپٹو کرنسی کے خلاف یہ دوسری بار کارروائی کی گئی ہے۔ ’نیچر کمیونیکیشنز‘ نامی جریدے کی اپریل میں شائع شدہ تحقیق کے مطابق دنیا بھر میں 75 فیصد سے زائد بٹ کوائن مائننگ اکاؤنٹس چین میں ہیں۔بٹ کوائن کی قدر میں گراوٹ کے باوجود رواں برس اس کی قیمت 110 فیصد اضافے سے 69،000 کی رکارڈ سطح کو چھو چکی ہے۔ Sq. Adsence 300X250

Leave a Reply

Your email address will not be published.

1 × 1 =

Back to top button