کان مین درد ہو یا ڈھیر سارا میل جمع ہوگیا ہو ۔۔ بناء کسی تکلیف کے گھر بیٹھے اس کو ختم کرنے کا ایسا طریقہ جو مشہور حکیم بھی بتاتے ہیں

کان ہمارے جسم کا ایک اہم حصہ ہیں، کیونکہ اگر یہ نہ ہوں تو ہمیں تو نہ کسی کی کوئی بات سنائی آئے گی اور نہ سمجھ آئے گی، نہ ہم کسی سے بات کر سکتے اور نہ کوئی ہم سے بات کرسکتا۔ آج کل تو وقت اتنا مصروف ہوگیا ہے کہ اگر کسی سے ایک مرتبہ کہی ہوئی بات دوبارہ پوچھ لو تو اسے غصہ آ جاتا ہے کہ بہرا ہے ابھی تو بتایا ہے، سنتے نہیں ہو کیا، کان کام نہیں کرتے کیا ایک بات کو کتنی مرتبہ دھرایا جائے۔
اکثر و بیشتر لوگوں کو کان میں درد کی شکایت رہتی ہے۔

اگر آپ کے کان میں بھی درد یا میل کچیل بھر گئی ہے تو کاٹن بڈز کو ہر گز کانوں مین نہ گھمائیں ان سے کان کے پردے پھٹنے کا اندیشہ رہتا ہے۔
اپنے کانوں کی احتیاط کریں، ان کو ہر ہفتے میں ایک مرتبہ روئی سے یا سرسوں میں کے تیل میں روئی ڈپ کرکے صاف کرلیا کریں۔ زور زور سے کانوں کے اندر انگلیاں بھی نہ ڈالا کریں کیونکہ کان کا پردہ حد سے زیادہ نازک ہوتا ہے۔

کان کی صفائی کا طریقہ:

٭ ایک پیاز کو چھیل کر اس کو چولہے پر سیک لگائیں تاکہ وہ اچھی طرح بھن جائے جیسے کہ تصویر میں دکھایا گیا ہے۔

٭ اب اس کو بلینڈر میں ڈال کر باریک پیس لیں اور اس کو نچوڑ کر اس کا رس نکال لیں، اس میں تھوڑا سا زیتون کا تیل مکس کریں اور اس کو کان میں معمولی سے قطرے کی صورت میں ڈالیں اور روئی کی مدد سے اچھی طرح پورے کان پر لگا لیں۔ اس سے میل بھی نرم ہو کر نکل جائے گی اور کان میں تکلیف بھی نہیں ہوگی۔

Source

Leave a Reply

Your email address will not be published.

2 × 5 =

Back to top button