ہمیں 29 سال بعد ٹورنامنٹ ملا اسے انجوائے کرنا چاہئیے، رمیز راجہ

لاہور: چیئرمین پی سی بی رمیز راجہ کا کہنا ہے کہ ہمیں 29 سال بعد ٹورنامنٹ ملا ہے اور ہمیں اسے انجوائے کرنا چاہئیے، انفرادی طور پر آئی سی سی کے ممبران کو راضی کیا ہے۔

چیرمین پاکستان کرکٹ بورڈ رمیز راجہ کا پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہنا تھا کہ 29 سال بعد آئی سی سی ایونٹ پاکستان کو ملنا بڑی فتح ہے کیونکہ انگلینڈ اور نیوزی لینڈ کے چلے جانے سے چیمئنزٹرافی کی میزبانی حاصل کرنے کے لئے زیادہ محنت لگی ہے۔چیئرمین پی سی بی رمیز راجہ کا کہنا تھا کہ چیمپئنز ٹرافی سے پہلے پاکستان ایشیا کپ کی میزبانی کرنے جارہا ہے اور ایشیا کپ کو بھارت کی وجہ سے یو اے ای منتقل نہیں کیا جائے گا، پاکستان نے انٹرنیشنل میچز کی میزبانی کے لئے بہت قربانیاں دی ہیں۔رمیز راجہ کا کہنا تھا کہ بنگلہ دیش اور سری لنکا انڈیا کے ساتھ چلے گئے، ہمارا یہ مسئلہ نہیں ہونا چاہیے اور جب تک سیاسی مداخلت ہوگی پاکستان اور بھارت کے درمیان کرکٹ بحال نہیں ہوسکتی۔چیئرمین پی سی بی کا کہنا تھا کہ ہم ایک منفرد مقام رکھتے ہی اور ہم نے خود سے ٹورنامنٹ کروانا ہے ہماری ٹیم اچھا کھیلے گی تو اس کا دنیا پر فرق پڑتا ہے۔چیئرمین پی سی بی کا کہنا تھا کہ انڈیا کے ساتھ دو طرفہ سیریز مشکل ہےالبتہ سہہ ملکی سیریز ہوسکتی ہے، آئی سی سی ایونٹ کا بائیکاٹ کرنا مشکل ہوتا ہے۔انہوں نے کہا کہ گنگولی کے ساتھ ورکنگ ریلیشن اچھا ہے اور ہم نے بہت سی باتیں کی ہیں، بڑے ایونٹ کی تیاریوں کے لئے ہم بہت پیچھے ہیں کیونکہ ہمیں اپنے اسٹیڈیم ٹھیک کرنے ہیں جس کے لیے پی سی بی کو پیسے چاہیں اور ہم چاہتے ہیں پرائیوٹ پارٹنر شپ ملنی چاہئیے۔رمیز راجہ کا کہنا تھا کہ اسٹیڈیم کو ٹھیک کرنا بھی ہے اور لائٹس بھی تبدیل ہونے والی ہیں، پاکستان ٹیم کے پاس بیٹنگ کے وسائل زیادہ نہیں ہیں اس لیے رضوان اور بابر کی جوڑی کو نہیں توڑنا چاہیے۔رمیز راجہ کا کہنا تھا کہ آسٹیرلیا میں ورلڈ کپ جیتنے کیلئے میرے پلان ہیں اور میں نے کبھی نہیں کہا کہ بابر اعظم کو ٹیسٹ کپتانی نہیں دوں گا، بابر اعظم نے ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ میں بہترین کپتانی کی اور نوجوان کپتان ہیں جب غلطیاں کرںں گے تو سکھیں گے بھی۔انہوں نے مزید کہا کہ قائد اعظم ٹرافی میں بیکار پچز سے زیادہ رنز بے معنی ہیں، میں آغا زاہد کو واپس لایا ہوں تاکہ پچز ٹھیک ہو۔ پرانے لوگ کس حال میں کرکٹ چھوڑ کر گئے ہیں وہ سب کے سامنے ہے۔ Sq. Adsence 300X250

Leave a Reply

Your email address will not be published.

one + fourteen =

Back to top button