ہیٹ ویو کی علامات، وجوہات اور بچاؤ کے طریقے

مئی کو عام طور پر ملک کا گرم ترین مہینہ قرار دیا جاتا ہے لیکن رواں برس مئی میں گرمی کی صورت حال برداشت سے باہر ہوگئی ہے۔شدید گرمی اور حبس کی وجہ سے ہیٹ اسٹروک شدید نقصان کا باعث بھی بن سکتا ہے، اس کی مثال 2015 میں سامنے آئی تھی جب ہیٹ اسٹروک سے صرف کراچی میں 1200 کے لگ بھگ افراد زندگی کی بازی ہار گئے تھے۔2015 کے بعد سے محکمہ موسمیات اور وفاقی و صوبائی حکومتیں مسلسل ہیٹ اسٹروک سے متعلق آگاہی اور الرٹ جاری کرتے رہتے ہیں لیکن اب بھی عوام کو اس حوالے سے آگاہی فراہم کرنے کی ضرورت ہے۔ہیٹ اسٹروک کی وجوہات:1) گرم اور خشک موسم2) شدید گرمی میں پانی پیئے بغیر مخنت مشقت یا ورزش کرنا3) جسم میں پانی کی کمی4) ذیابیطس کا بڑھ جانا5) دھوپ میں براہ راست زیادہ دیر رہناہیٹ اسٹروک کی علامات:1) سرخ اور گرم جلد2) جسم کا درجہ حرارت 104 ڈگری فارن ہائیٹ ہوجانا3) غشی طاری ہونا4) دل کی دھڑکن بہت زیادہ بڑھ جانا5) جسم سے پسینے کا اخراج روک جانا6) پٹھوں کا درد7) سر میں شدید درد8) متلی ہوناہیٹ ویو سے کیسے بچا جائے؟ہیٹ ویو کے دوران لوگ صبح 11 سے شام 4 بجے تک غیر ضروری طور پر باہر نہ نکلیں، اگر گھر سے باہر جانا ضروری ہو تو کوشش کریں کہ سایہ دار راستہ اختیار کریں، سر ڈھانپ کر نکلیں اور دھوپ والے مقام پر زیادہ دیر نہ ٹھہریں۔دھوپ میں گھر سے باہر نکلنا پڑے تو ایسے میں سر پر ٹوپی پہنیں، گیلا رومال یا کپڑا رکھیں، ننگے پاؤں باہر نہ نکلیں، دن کے اوقات میں کھلے آسمان تلے کھیل کود سے گریز کریں، ہلکے اور نرم کپڑے پہنیں، سیاہ یا گہرے رنگ کے کپڑوں کا استعمال ہرگز نہ کریں۔گرمی میں بچے اور بزرگ شہری خاص طور پراحتیاط کریں، ان کی قوت مدافعت کم ہوتی ہے اس لئے انہیں گرمی سے زیادہ خطرات لاحق ہوتے ہیں۔گرم موسم میں ہمیشہ گھر کا تازہ بنا ہوا کھانا کھائیں، سبزیاں، دالیں، پھل، دہی اور دودھ کا استعمال زیادہ کریں، ایک دن میں 15 سے 20 گلاس پانی یا مشروب پئیں۔

Source

Leave a Reply

Your email address will not be published.

five × two =

Back to top button